LyricsManqabatNaat Lyricsکلاممنقبت

Manzar Fiza e Dahar Main Sara Ali Kaa Hay

By May 26, 2019No Comments

Manzar Fiza e Dahar Main Sara Ali Kaa Hay
Jis simt dekhta hu nazarah ALI ka Hai…

Dunya e Aatshi ki phaban Mujtaba HASAN,
Laqt-e-jigar NABI ka to pyara ALI ka hai…

Hasti ki aabo taab HUSSAIN aasman janaab,
ZEHRA ka laal raaj dulara ALI ka Hai…

Marhab do neem hai sar-e-maqtal pada hua,
Uthne ka ab nahi ke ye Mara ALI ka hai…

Kul ka Jamaal juz ke chere se hai ayaan,
Ghode pe Hai HUSSAIN nazara ALI ka hai…

Ay Arze Paak! Tujh ko mubarak ke tere paas,
Chamane NABI ka Chand sitarah ALI ka hai…

Ahle hawas ki luqmae tar par teri nazar,
Naane Jawee pe sirf guzara ALI ka hai…

Tum dakhl de rahe ho aqidat ke baab me,
Dekho muamela yeh hamara ALI ka Hai…

Hum faqr mast chahne wale ALI ke hai,
Dil par hamare sirf ijara ALI ka hai…

Aasar padh ke mehdi-e-dauran ka yon laga,
Jaise zahoor wo bhi dubarah ALI ka Hai…

Dunya me koun hai apna bajuz ALI,
hum bekason ko hai to Sahara ALI ka hai…

Ashabi’kan nujoom ka irshaad bhi baja,
Sabse magar buland sitara ALI ka hai…

Tu Kya Hai aur Kya hai tere ilm ki bisaat,
Tujh par Karam NASEER  yeh Sara ALI ka hai.


منظر فضائے دہر میں سارا علی کا ہے
جس سمت دیکھتا ہوں، نظارہ علی کا ہے

دنیائے آشتی کی پھبن ، مجتبی حسن
لختِ جگر نبی کا تو پیارا علی کا ہے

ہستی کی آب و تاب،حسین آسماں جناب
زھرا کا لال، راج دلارا علی کا ہے

مرحب دو نیم ہے سر مقتل پڑا ہوا
اُٹھنے کا اب نہیں کہ یہ مارا علی کا ہے

کُل کا جمال جزو کے چہرے سے ہے عیاں
گھوڑے پہ ہیں حسین، نظارا علی کا ہے

اے ارض پاک ! تجھ کو مبارک کہ تیرے پاس
چم نبی کا ، چاند ستارہ علی کا ہے

اہل ہوس کی لقمۂ تر پر رہی نظر
نانِ جویں پہ صرف گزارا علی کا ہے

تم دخل دے رہے ہو عقیدت کے باب میں
دیکھو مُعاملہ یہ ہمارا علی کا ہے

ہم فقر مست، چاہنے والے علی کے ہیں
دل پر ہمارے صرف اجارا علی کا ہے

آثار پڑھ کے مہدی دوراں کے یوں لگا
جیسے ظہور وہ بھی دوبارا علی کا ہے

دنیا میں اور کون ہے اپنا بجز علی
ہم بے کسوں کو ہے تو سہارا علی کا ہے

اصحابی کالنجوم کا ارشاد بھی بجا
سب سے مگر بلند ستارا علی کا ہے

تو کیا ہے اور کیا ہے تِرے علم کی بساط
تجھ پر کرم نصیر یہ سارا علی کا ہے

پیر نصیر الدین نصیر گولڑوی