Skip to main content
نعت

کرم ہے تمہارا عنایت تمہاری

By September 6, 2021No Comments

کرم ہے تمہارا عنایت تمہاری
دو عالم پہ بالا ہے امّت تمہاری

شہیدٌ علیٰ النّاس اُمّت تمہاری
وَلٰکِنْ کَفَانَا شہادت تمہاری

نہ پایا کسی نے نہ پائے گا کوئی
یہ رُتبہ تمہارا یہ عزّت تمہاری

اسے پھر جہنّم سے کیا ہو علاقہ
ہے جس دل میں سرکار اُلفت تمہاری

سبھی چاہتے ہیں وسیلہ تمہارا
بھلا کس کو چھوڑے شفاعت تمہاری

اُنہیں بے کَسی میں جس نے پُکارا
بڑھی، کھولے آغوش رحمت تمہاری

عنایت تو اعدا پہ بھی ہو رہی ہے
غلاموں کو کیا چھوڑے رافت تمہاری

اگرچہ معاصی میں سرشار ہیں ہم
مگر ہے تو آخر شفاعت تمہاری

کرو خادمِ شرع بُرہاںؔ کو اپنے
کہ خدمت خدا کی ہے خدمت تمہاری

طریقہ کرو اپنے آباء کا روشن
اسی میں ہے بُرہانؔ عزّت تمہاری