Skip to main content
نعت

آنکھوں کا تارا نام محمد

By September 7, 2021No Comments

آنکھوں کا تارا نام محمد
دل کا اجالا نام محمد

اللہ اکبر رب العلا نے
ہر شے پہ لکھا نام محمد

ہیں یوں تو کثرت سے نام لیکن
سب سے ہے پیارا نام محمد

دولت جو چاہو دونوں جہاں کی
کرلو وظیفہ نام محمد

شیدا نہ کیوں ہوں اُس پر مسلماں
رب کو ہے پیارا نام محمد

اللہ والا دم میں بنا دے
اللہ والا نام محمد

صل علیٰ کا سہرہ سِجا کر
دولھا بنا یا نام محمد

نوح و خلیل و موسیٰ و عیسیٰ
سب کا ہے آقا نام محمد

سارے چمن میں لاکھوں گلوں میں
گل ہے ہزارا نام محمد

پائیں مرادیں دونوں جہاں میں
جس نے پکارا نام محمد

مومن کو کیوں ہو خطرہ کہیں پر
دل پر ہے کندہ نام محمد

رکھو لحد میں جس دم عزیزو
مجھ کو سنا نا نامِ محمد

پڑھتی درودیں دوڑیں گی حوریں
لاشہ جو لےگا نام محمد

روز قیامت میزان و پل پر
دے گا سہارا نام محمد

پوچھے گا مولیٰ لایا ہے کیا کیا
میں یہ کہوں گا نام محمد

غم کی گھٹائیں چھائی ہیں سر پر
کردے اشارہ نام محمد

رنج و الم میں ہیں نام لیوا
کردے اشارہ نام محمد

بیڑا تباہی میں آگیا ہے
دے دے سہارا نام محمد

زخمی جگرپر مجروح دل پر
مرہم لگا جا نام محمد

دل میں عداوت خر کی بھر ی ہے
نجدی نہ لے گا نام محمد

اپنے رضا کے قربان جاؤں
جس نے سکھایا نامِ محمد

آنکھوں میں آکر دل میں سما کر
رنگت رچا جا نام محمد

اپنے جمیل رضوی کے دل میں
آجا سما جا نام محمد

قبالۂ بخشش