Skip to main content

Talab ka moonh toh kis qaabil hay Yaa Ghaus
Magar teraa karam kaamil hay Yaa Ghaus

Duhaayi Yaa Muhiyuddin duhaayi
Balaa Islaam par naazil hay Yaa Ghaus

Woh sangeen bid’atein woh tezi e kufr
Key sar par taigh dil par sil hay Yaa Ghaus

‘Azooman qaatilan indal qitaalee
Madad ko aa dam e bismil hay Yaa Ghaus

Khuda raa naa khuda aa dey sahaara
Hawaa bigri bhanwar haayil hay Yaa Ghaus

Jilaa dey dein jalaa dey kufr o ilhaad
Key tu muhiyi hay tu qaatil hay Yaa Ghaus

Tera waqt aur parrey yoon deen par waqt
Nah tu ‘aajiz hay nah tu ghaafil hay Yaa Ghaus

Rahi haan shaamat e aamaal yeh bhi
Jo tu chaahe abhi zaayil hay Yaa Ghaus

Ghayuraa! apni ghairat ka tasadduq
Wohi kar jo tere qaabil hay Yaa Ghaus

Khudara marham e khaak e qadam dey
Jigar zakhmi hay dil ghaayil hay Yaa Ghaus

Na dekhun shakl e mushkil tere aagey
Koi mushkil si yeh mushkil hay Yaa Ghaus

Woh ghera rishta e shirk e khafi ney
Phansa zunnaar mein yeh dil hay Yaa Ghaus

Kiye tarsaa o gabr aqtaab o abdaal
Yeh mahaz Islaam ka saayil hay Yaa Ghaus

Tu kuwwat dey main tanha kaam besyaar
Badan kamzor dil kaahil hay Yaa Ghaus

‘Adoow bad deen mazhab waale haasid
Tu hi tanha kaa zor e dil hay Yaa Ghaus

Hasad sey unn key seeney paak kar dey
Keh badtar dik sey bhi yeh sil hay Yaa Ghaus

Ghizaaye dik yahi khoon ustikhwaan gosht
Yeh aatish deen ki aakil hay Yaa Ghaus

Diya mujh ko unhein mehroom chora
Mera kya jurm haq faasil hay Yaa Ghaus

Khuda sey lein laraayi woh hay mu’tii
Nabi qaasim hay tu moosil hay Yaa Ghaus

Ataayein muqtadir ghaffaar ki hain
Abas bandon key dil mein ghil hay Yaa Ghaus

Tere baba ka phir tera karam hay
Yeh moonh warna kisi qaabil hay Yaa Ghaus

Bharan waaley tera jhaala toh jhaala
Tera cheenta mera ghaasil hay Yaa Ghaus

Sanaa maqsood hay ‘arz e gharaz kya
Gharaz ka aap toh kaafil hay Yaa Ghaus

Raza kaa khatima bil khair hoga
Teri rehmat agar shaamil hay Yaa Ghaus

#Aalahazrat

طلب کا منھ تو کس قابل ہے یا غوث
مگر تیرا کرم کامل ہے یا غوث

دوہائی یَا مُحِیُّ الدِّین دوہائی
بَلا اسلام پر نازل ہے یا غوث

وہ سنگیں بِدعَتیں وہ تیزیِ کفر
کہ سر پر تِیغ دل پر سِل ہے یا غوث

عَزُوْمًا قَاتِلًا عِنْدَ الْقِتَالٖ
مدد کو آ دمِ بِسمِل ہے یا غوث

خدا را ناخُدا آ دے سہارا
ہوا بگڑی بھَنْوَر حائل ہے یا غوث

جِلا دے دیں جَلا دے کفر و اِلحاد
کہ تُو محیٖی ہے تُو قاتل ہے یا غوث

تِرا وقت اور پڑے یوں دین پر وقت
نہ تو عاجز نہ تو غافل ہے یا غوث

رہی ہاں شامتِ اعمال یہ بھی
جو تو چاہے ابھی زائل ہے یا غوث

غَیُورا! اپنی غیرت کا تَصَدُّق
وہی کر جو تِرے قابل ہے یا غوث

خدا را مرہمِ خاکِ قدم دے
جگر زخمی ہے دل گھائل ہے یا غوث

نہ دیکھوں شکلِ مشکل تیرے آگے
کوئی مشکل سی یہ مشکل ہے یا غوث

وہ گھیرا رشتۂ شرکِ خَفی نے
پھنسا زُنّار میں یہ دل ہے یا غوث

کیے تَرسا و گَبْر اَقطاب و اَبدال
یہ محض اسلام کا سائل ہے یا غوث

تو قُوَّت دے میں تنہا کام بِسیار
بدن کمزور دل کاہل ہے یا غوث

عَدُوّ بد دین مذہب والے حاسد
تو ہی تنہا کا زورِ دل ہے یا غوث

حسد سے ان کے سینے پاک کر دے
کہ بَدتر دِق سے بھی یہ سِل ہے یا غوث

غذائے دِق یہی خوں اُستخواں گوشت
یہ آتِش دین کی آکِل ہے یا غوث

دیا مجھ کو انھیں محروم چھوڑا
مِرا کیا جرم حق فاصل ہے یا غوث

خدا سے لیں لڑائی وہ ہے مُعطِی
نبی قاسم ہے تو مُوصِل ہے یا غوث

عطائیں مُقْتَدِر غَفَّار کی ہیں
عَبَث بندوں کے دل میں غِلّ ہے یا غوث

تِرے بابا کا پھر تیرا کرم ہے
یہ منھ ورنہ کسی قابل ہے یا غوث

بَھرَن والے تِرا جھالا تو جھالا
تِرا چھینٹا مِرا غاسِل ہے یا غوث

ثَنا مَقْصود ہے عَرضِ غَرض کیا
غرض کا آپ تُو کافِل ہے یا غوث

رضاؔ کا خاتِمہ بالخیر ہو گا
تِری رحمت اگر شامل ہے یا غوث

اعلیٰ حضرت

#ManqabateGauseAazam
#NaatAcademy