Skip to main content
نعت

یاد طیبہ مرے جینے کا سہارا کردے

By March 29, 2022No Comments

یاد طیبہ مرے جینے کا سہارا کردے
مجھ کو اب الفت دنیا سے کنارا کردے

ظلمت و کفر زمانے سے مٹا کر مولی
دہر میں چار سو اسلام کو بالا کردے

فرقت طیبہ کے غم میں رہے یہ دل ہر دم
اذن طیبہ کو مرے غم کا مداوا کردے

ان کی مہکی ہوئی زلفوں کے تصدق مولی
خوب روشن مری قسمت کا ستارہ کردے

اپنے ہونٹوں پہ ملیں زائر طیبہ جس کو
مجھ کو بھی گلشن زہرا کا وہ پتا کردے

رشک قسمت پہ کریں میری بھی حوران بہشت
میرے مولی تو مقدر مرا ایسا کردے

میں گنہگار خطاکار ہوں بندی مولی
روز محشر مرے عیبوں پہ تو پردہ کردے

ہے دعا عائشہ کی تجھ سے بس اتنی مولی
نعت آقا مری بخشش کا سہارا کردے

از قلم: عائشہ صدیقہ جنیدی