Skip to main content
منقبت

ہے در پہ آپ کے اِک روسیاہ ، یا زہرا

By April 7, 2022No Comments

*منقبت پاک در شانِ سیدہء کائنات جگر گوشۂ رسول سیدہ ظاہرہ طیبہ طاہرہ نجیبہ عفیفہ حضرتِ فاطمۃ الزہراء سلام اللہ علیہا و ابیہا*

ہے در پہ آپ کے اِک روسیاہ ، یا زہرا
پئے حُسین و حسن اِک نِگاہ ، یا زہرا

طلب مجھے ہے یہی عِزّ و جاہ ، یا زہرا
بنے فقیر ، تری گردِ راہ ، یا زہرا

مطافِ حسنِ نجابت وجود ہے تیرا
ہیں ہشتِ خُلد تری بار گاہ ، یا زہرا

رسولِ پاک کھڑے ہوں برائے استقبال
عجب یہ شان تری واہ واہ، یا زہرا

تری حیاتِ مبارک ہے معرفت کا نصاب
ہے تیرا نقشِ قدم خضرِ راہ ، یا زہرا

مِلا ہے ملکۂ اہلِ بہشت کا رتبہ
حدیثِ پاک ہے اِس پر گواہ ، یا زہرا

تمہیں حضور نے فرمایا “بضعتہ منّی”
خفا ہو تم ، تو خفا ہو نگے شاہ ، یا زہرا

ورائے عقل تیری شانِ عظمت و رفعت
مہ و نجوم تری گردِ راہ ، یا زہرا

ہو اِس کا خاتمہ بالخیر شہرِ طیبہ میں
یہی ہے نوریؔء مضطر کی چاہ ، یا زہرا

ندیم نوریؔ