Skip to main content
نعت

ہر رنگ میں ان کا جلوہ ہے

By August 12, 2021No Comments

ہر رنگ میں ان کا جلوہ ہے ہرحُسن میں اُن کی رعنائی

ہر قلب میں اُن کا مسکن ہے ہر آنکھ میں ان کی زیبائی

بے چین ہوں یاد بطحا میں، سہتا ہوں جُدائی کے صدمے

دِل ہجر نبی میں روتا ہے، تڑپاتی ہے شب کی تنہائی

منہ مانگی مرادیں ملتی ہیں، ہر غم کا مداوا ہوتا ہے

دَربار نبی اکرم سے جو چیزبھی مانگی وہ پائی!

جو راحت جاں ہے وجہ سکوں ہر درد کا درماں کیوں نہ کہوں

وہ یاد تمہاری ہے آقا جو ھر مشکل میں کام آئی

کہتے ہیں جسے سب خلدِ نظر سایہ ہے تمارے دامن کا

نسبت ہے جسے اس دامن سےکچھ غم نہ فِکر رُسوائی

جب لطف ہے شاہِ دو عالم اے حُسن ِ مجسم جانِ کرم

ہم بھی ہوں وہاں حاضر کہ جہاں ہے آپ کی جلوہ آرائی

یہ ان کے کرم کا صدقہ ہے، یہ ان کی عطا کی باتیں ہیں

خُدّام کو بخشا تاجِ شہی منگتوں پہ تصّدق دارائی

کشتی محبت سے لاکھوں طوفانِ حوادث ٹکرائے

پِھر بھی سرِ ساحل اے خاؔلد سرکار کی نسبت لے آئی

Leave a Reply