Skip to main content
نعت

کتنی حسیں فضا ہے کتنی حسین سحر ہے

By August 19, 2021No Comments

کتنی حسیں فضا ہے کتنی حسین سحر ہے
کیا بے حجاب میرا وہ مرکز نظر ہے


سورج بھی آگیا ہے دینے خراج تحسین
کس کی ضیاء سے روشن گہوارۂ سحر ہے


ارباب ہوش اس کو جو چاہیں فرض کرلیں
ہر اشک غم حقیقت میں نازش گہر ہے


پاکے رہوں گا ان کو اک دن ضرور ہمدم
یہ عشق میرا بازو یہ عشق میرا پر ہے


وہ دل بھی کوئی دل ہے جو دل ہو تجھ سے خالی
تیرے سوا جو دیکھے وہ بھی کوئی نظر ہے


ورنہ کہاں سے آتا یہ حسن کہکشاں میں
دل میرا کہہ رہا ہے یہ ان کہ رہ گزر ہے


اخؔتر چلوں میں تنہا مجھ کو نہیں گوارا
گر وہ نہیں تو ان کا غم میرا ہم سفر ہے

Was this article helpful?
YesNo