Skip to main content
نعت

چھایا ہے کیف دل پر قدموں میں بیٹھ کر

By January 1, 2022September 9th, 2022No Comments

چھایا ہے کیف دل پر قدموں میں بیٹھ کر
ہے اَوج پر مُقَدّر قدموں میں بیٹھ کر

خوشبوئے مصطفیٰﷺ سے عالم مہک رہا ہے
میں بھی ہوا مُعَطّر قدموں میں بیٹھ کر

تسکین قلب مجھ کو پھر سے ہوئی ہے حاصل
رُودادِ غم سنا کر قدموں میں بیٹھ کر

کیا اب بھی میرے ربﷻ کا مجھ پر کرم نہ ہوگا
پھیلے ہیں ہاتھ دَر پر قدموں میں بیٹھ کر

طیبہ میں رحمتوں کی بارش برس رہی ہے
دیکھا ہے پیارا مَنْظر قدموں میں بیٹھ کر

غوث و رضا کے صدقے خوا جہ پیا کے صدقے
افطار ہے مَیَسّر قدموں میں بیٹھ کر

نور نبیﷺ سے عالم روشن ہوا ہے شاکرؔ
دل بھی ہوا منور قدموں میں بیٹھ کر

سلطانِ دوجہاںﷺ کا تجھ پر کرم ہے شاکرؔ
آنکھیں ہوئی ہیں پھر تر قدموں میں بیٹھ کر

کلام:
مولانا محمد شاکر علی رضوی نوری