Skip to main content
نعت

نعتِ حبیبﷺ کہئے کہ حمدِ خدا بھی ہے

By August 23, 2021No Comments

نعتِ حبیبﷺ کہئے کہ حمدِ خدا بھی ہے
توصیف مصطفیٰﷺ کی خدا ثناء بھی ہے


تو اصلِ کُنْ ہے، حاصلِ ہر مدّعا بھی ہے
اے مبتدائے خلق تو ہی منتہا بھی ہے


سر تا پا تو بشر ہے، بشر سے سوا بھی ہے
یعنی تمام مظہرِ عینِ خدا بھی ہے


ہر ٹیسں میں سکوں ہے تڑپ میں مزا بھی ہے
دردِ فراقِ ماہِ مدینہ دوا بھی ہے


کعبہ میں ہوں جبیں پئے سجدہ ہے بیقرار
شاید مرے نبیﷺ کا یہیں نقشِ پا بھی ہے


ایمان کی تو یہ ہے کہ پاکر درِ حضورﷺ
جو ہوش میں نہ ہو اسے سجدہ روا بھی ہے


اے اہلِ عرش! خاک نشیں ہم سہی مگر
یہ فرشِ خاک مسندِ شاہِ دنیٰ بھی ہے


مکہ کی شب میں صبحِ مدینہ ہے جلوہ گر
کیا حُسن عارضِ پسِ زلفِ دوتا بھی ہے


کچھ بھی سہی حضورﷺ مگر ہے تو آپ کا
اختؔر گناہگار بھی، بَد بھی، بُرا بھی ہے

Was this article helpful?
YesNo