NaatNaatepaakنعت

نظارے ہیں گو لاکھوں جہاں بھر کے نظر میں

By February 9, 2021No Comments

Nazare Hain Go Lakhoon Jahan Bhar Ke Nazar Mein
Hai Kaif Magar Aur Madeene Ke Safar Mein

Ae Sahibe Laulak Teri Bheek Ki Khatir
Baithy Hain Shahenshah Teri Raah Guzar Mein

Ae Gunbad Khazra Tere Anwaar Pe Qurban
Kuch Farq Nazar Aata Nahi Shaam O Sahar Mein

Hai Jalwa-e-mahboobﷺ Ki Ye Khaas Nishani
Ate Hain Nazar Woh To Kisi Deeda-e- Tar Mein

Dekha Jo Madeene Mein Kahin Aur Nah Dekha
Jalwon Ko Sajaye Ga Bhala Kon Nazar Mein

Firdous Nazar Kyun Na Banin Woh Dar O Deewar
Sarkarﷺ Jo Aa Jayen Gnahgar Ke Ghar Mein

Taiba Ke Siwa Daikhon Na Kuch Aur Zahoori
Anwaare Madina Hain Mare Qalb O Jigar Mein

Kalaam : Mohammad Ali Zahoori


نظارے ہیں گو لاکھوں جہاں بھر کے نظر میں
ہے کیف مگر اور مدینے کے سفر میں

اے صاحبِ ﷺ لو لاک تری بھیک کی خاطر
بیٹھے ہیں شہنشاہ تری راہ گزر میں

اے گنبد خضرا ترے انوار پہ قرباں
کچھ فرق نظر آتا نہیں شام و سحر میں

ہے جلوہ محبوبﷺ کی یہ خاص نشانی
آتے ہیں نظر وہ تو کسی دیدہ تر میں

دیکھا جو مدینے میں کہیں اور نہ دیکھا
جلوؤں کو سجائے گا بھلا کون نظر میں

فردوسِ نظر کیوں نہ بنیں وہ در و دیوار
سرکارﷺ جو آ جائیں گہنگار کے گھر میں

طیبہ کے سوا دیکھوں نہ کچھ اور ظہوری
انوار مدینہ ہیں مرے قلب و جگر میں

کلام: محمد علی ظہوری