Skip to main content
نعت

مچی ہے دھوم پیمبر کی آمد آمد ہے

By September 7, 2021No Comments

مچی ہے دھوم پیمبر کی آمد آمد ہے
حبیب خالق اکبر کی آمد آمد ہے

کیا ہے سبز علم نصب بام کعبہ پر
کہ دو جہاں کے سرور کی آمد آمد ہے

نہ کیوں ہو نور سے تبدیل کفر کی ظلمت
خدا کے ماہ منور کی آمد آمد ہے

ہے جبرئیل کو حکم خدا خبر کردوہ
کہ آج حق کے پیمبر کی آمد آمد ہے

خوشی کے جوش میں ہیں بلبلیں بھی نغمہ کناں
چمن میں آج گل ِترکی آمد آمد ہے

دوز انو ہو کے ادب سے پڑھو صلاۃ وسلام
عزیز و خلق کے مصدر کی آمد آمد ہے

جمیلِ قادری کہہ دے کھڑے ہوں اہل سنن
ہمارے حامی ویاور کی آمد آمد ہے

قبالۂ بخشش