Skip to main content
نعت

پانی پانی جوشِش عصیاں ہے ساحل کے قریب

By August 20, 2021No Comments

پانی پانی جوشِش عصیاں ہے ساحل کے قریب
اور رحمت مسکراتی ہے مرے دل کے قریب


اللہ اللہ طالبانِ حق کی خاطر داریاں
حق ہے شہ رگ کے قریں تو مصطفیٰﷺ دل کے قریب


دیکھ کر طیبہ کے سائے بیخودی میں کھوگئے
ہوش دیوانوں کو آیا اپنی منزل کے قریب


ہے اگر صدق ِ طلب تو ایں و آں کو چھوڑئے
اپنی منزل ڈھونڈئے خود اپنے ہی دل کے قریب


لامکاں میں بھی نہیں ملتا کہیں جن کا سراغ
تو اگر ڈھونڈے تو مل جائیں تجھے دل ک قریب


بند آنکھیں کیا ہوئیں، آنکھوں کی قسمت کھل گئی
اُس کے جلوے مل گئے ٹوٹے ہوئے دل کے قریب


ہیں فروزاں مشعلیں، قدوسیوں کے روپ میں
روضۂ پرنور پر، سجدہ گہِ دل کے قریب


ہر اشارہ سے ہے اعجازِ یَدُ اللّٰہی عیاں
چاند سورج کھیلتے ہیں ان انامل کے قریب


دوجہاں میں مچ رہی ہے اِنّا اعطینا کی دھوم
سایۂ الطافِ رب ہے ان کے سائل کے قریب


ٹوٹتی ہیں بندشیں برپا ہو جب شورش خلیؔل
ملتی ہیں آزادیاں، شور سلاسِل کے قریب

Was this article helpful?
YesNo