Skip to main content

🌺ثناۓ حضور ﷺ🌺
(نادر و نایاب قوافی)

جہاں میں تذکرہ ہے جن لبوں کی جگمگاہٹ کا
اجالا ہو مرے دل میں بھی ان کی مسکراہٹ کا

ادب کی اوڑھ کر چادر ، پئےِ تسلیم آتی ہے
نہیں اُس در پہ آوازہ ، ہوا کی سرسراہٹ کا

پلادیتے ہیں جس کو جام وہ چشمِ عنایت سے
نہ اُس کو خوف گِرنے کا نہ خطرہ ، لڑکھڑاہٹ کا

بڑی مُعجِز خرامی سے قدم رکھتے ہیں وہ لیکن
فضا کی مشکباری ، کام کردیتی ہے آہٹ کا

درِ رحمت کے ذروں میں ستارے جھلملاتے ہیں
دلِ بینا سے ہوتا ہے نظارہ ، جِھلملاہٹ کا

عرق اُن کا عروسِ گل کے ہے دامانِ فطرت میں
یہی ہے راز ، گلشن میں کلی کی کِھکھلاہٹ کا

اگر ذوقِ ترنم ہو تو بس اُن کی ثنا گاؤ !
تعلق ، خلد سے ہے نعتِ شہ کی گنگناہٹ کا

گِری احقاقِ حق کی ایسی بجلی اُن کی آمد سے
ابھی تک قصرِ باطل میں ہے عالم ، سنسناہٹ کا

حقیقت نے لگایا وہ تمانچہ ، اُن کے بدگو پر
رہے گا حشر تک احساس اُس کی جَھنجھناہٹ کا

دواۓ توبہ سے وہ آج ہی کر لے علاج اپنا
خلافِ اہلِ حق ، جس کو جنوں ہے بڑبڑاہٹ کا

امیری میں بھی ہم شانِ فقیری رکھتےہیں سیفی
اثر ، دل پر نہیں ہے سیم و زر کی کھنکھناہٹ کا

سیدشاکرحسین سیفی

https://www.facebook.com/NaatAcademyIN/

Naat Lyrics

Https://instagram.com/naatacademy