Skip to main content
نعت

تم کو یدِ قدرت نے کیا خوب سنوارا ہے

By August 23, 2021No Comments

تم کو یدِ قدرت نے کیا خوب سنوارا ہے
وَالنَّجم کا منظر ہے طٰہٰ کا نظارا ہے


گو طُور کا جلوہ بھی آنکھوں گوارا ہے
طیبہ کا نظارا پھر طیبہ کا نظارا ہے


اس ذاتِ گرامی کو سمجھا تو خدا سمجھا
جس ذاتِ گرامی پر قرآن اتارا ہے


تم شافع و نافع ہوﷺ، میں خاطئ و عاصیﷺ ہوں
پیارا جو تمھارا ہے اللہ کو پیارا ہے


وہ جس نے شرف بخشا آغوشِ یتیمی کو
اسلام کی قسمت ہے دنیا کا سہارا ہے


کیوں بھیک کسی در سے سرکارﷺ بھلا مانگوں
آقاﷺ تِرے ٹکڑوں پر میرا تو گزارا ہے


لبّیک کی آتی ہے آواز ہر اِک دل سے
شاید سرِ فاراں سے پھر ہم کو پکارا ہے


اَخلاق کے شانے سے اے جانِ کرم تو نے
ایک ایک خمِ گیسو ہستی کا سنوارا ہے


دامن تِرے ہاتھوں میں ہے حضرتِ حسّاں کا
کس اوج پہ اے اختؔر قسمت کا ستارا ہے

Was this article helpful?
YesNo