Skip to main content
نعت

تخت شاہی نہ سیم و گہر چاہیے

By August 18, 2021No Comments

تخت شاہی نہ سیم و گہر چاہیے
یانبیﷺ آپ کا سنگِ در چاہیے


ماہ و خورشید کی کوئی حاجت نہیں
زلف کی شام رخ کی سحر چاہیے


کیا کرونگا میں رضواں تری خلد کو
آمنہ﷝ کے دلارےﷺ کا گھر چاہیے


چشم دل کے لئے کحل درکار ہے
خاک پائے شہ بحر و بر چاہیے


مجھ کو دنیا کی نظروں سے کیا واسطہ
چشم الطاف خیر البشر چاہیے


اپنا دل عشق احمد سے معمور کر
رحمت کبریا تجھ کو گر چاہیے


ان کی یادوں میں رونا بھی ہے بندگی
یاالٰہی مجھے چشم تر چاہیے


زندگانی ہے مطلوب اخؔتر مجھے
سوزش داغ ہائے جگر چاہیے
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

Was this article helpful?
YesNo