Skip to main content
نعت

بے سہاروں کا کوئی سہارا نہیں

By August 18, 2021No Comments

بے سہاروں کا کوئی سہارا نہیں
میری قسمت کا روشن ستارا نہیں


یانبیﷺ آئیے رحم فرمائیے
ناؤ طوفان میں ہے کنارا نہیں


یہ ہے رضواں دیارِ حبیب خداﷺ
باغِ خلد بریں کا نظارا نہیں


یہ چمک میری اشکِ ندامت کی ہے
عرشِ اعظم کا کوئی ستارا نہیں


اس کو دنیا و عقبیٰ سے کیا واسطہ
جو مرے کملی والے تمھارا نہیں


جاسکے گا نہ کوئی کبھی خلد میں
تیری انگشت کا گر اشارا نہیں


گل میں ان کی مہک چاند میں روشنی
کملی والے نے کس کو سنوارا نہیں


اپنے درپہ ہمیں بھی بلا لیجئے
تجھ بن اے کملی والے گذارا نہیں


کاش آواز آئے لبِ پاک سے
کون کہتا ہے اخؔتر ہمارا نہیں

Was this article helpful?
YesNo