Skip to main content
نعت

بہر پہلو اذیّت، ہر نفس تکلیفِ روحانی

By August 25, 2021No Comments

مدد اے آمنہ کے لالﷺ

بہر پہلو اذیّت، ہر نفس تکلیفِ روحانی
سراپا درد بن کر رہ گئی ہے ہیستئ فانی
نزول آفاتِ پیہم کا، حوادث کی فراوانی
امید و یاس و حسرت‘ رنج و غم، حزن و پریشانی
فلک بے مہر، طالع نارسا، دل وقفِ حیرانی
مدد اے آمنہ کے لال اے محبوبِ سبحانیﷺ
اجڑتا جارہا ہے رفتہ رفتہ گلشنِ ہستی
حوادث آہ لوٹے لے رہے ہیں قلب کی بستی
امنگیں ہیں نہ اب دل میں، نہ اب وہ روح میں مستی
ہوئی جاتی ہے پروازِ تخیّل مائلِ پستی
فلک بے مہر‘ طالع نارسا، دل وقفِ حیرانی
مدد اے آمنہ کے لال اے محبوبِ سبحانیﷺ
مجسم کرب و بے چینی مرا دل ہوتا جاتا ہے
مجھے اب سانس تک بھی لینا مشکل ہوتا جاتا ہے
مسافر زیست کا گم کردہ منزل ہوتا جاتا ہے
نظر سے دُور رفتہ رفتہ ساحل ہوتا جاتا ہے
فلک بے مہر‘ طالع نارسا، دل وقفِ حیرانی
مدد اے آمنہ کے لال اے محبوبِ سبحانیﷺ
مسلسل رنج و غم نے چھین لی ہے ہر خوشی مجھ سے
ہنسی یوں دور ہے جیسے کہ ہے روٹھی ہوئی مجھ سے
مرا ہر ہَر نَفَس رکھتا ہے گویا دشمنی مجھ سے
نگاہیں پھیرتی جاتی ہے میری زندگی مجھ سے
فلک بے مہر‘ طالع نارسا، دل وقفِ حیرانی
مدد اے آمنہ

کے لال اے محبوبِ سبحانیﷺ
یہ دل شام و سحر افسردہ و مغموم رہتا ہے
نہ جانے کس قدر آٹھوں پہر دکھ درد سہتا ہے
مسلسل ایک دریا اشک کا آنکھوں سے بہتا ہے
حضورﷺ اب آپﷺ سے بیمار اختؔر کہتا ہے
فلک بے مہر‘ طالع نارسا، دل وقفِ حیرانی
مدد اے آمنہ کے لال اے محبوبِ سبحانیﷺ
دل افگاروں کے ہر زخمِ جگر کا آپ مرہم ہیں
علاجِ لا دوا ہیں، غمزدوں کا چارۂ غم ہیں
فقط ہم بیکسوں کی آپ دنیا، آپ عالم ہیں
ہمارا آپ ہی دل، آپ ہی جاں، آپ ہی دم ہیں
فلک بے مہر‘ طالع نارسا، دل وقفِ حیرانی
مدد اے آمنہ کے لال اے محبوبِ سبحانیﷺ
مسلسل زخم کھا کر نیم جاں ہے قلب سینے میں
خراشیں پڑ چکی ہیں سیکڑوں اس آبگینے میں
یہ جینا بھی کوئی جینا ہے،مرنے میں نہ جینے میں
تمنا ہے پہنچکر موت آجائے مدینے میں
فلک بے مہر‘ طالع نارسا، دل وقفِ حیرانی
مدد اے آمنہ﷞ کے لال اے محبوبِ سبحانیﷺ
بس اب حد سے سوا ہے دردِ دل، دردِ جگر آقاﷺ
مری جانب بھی الطاف و کرم کی اِک نظر آقاﷺ
نگاہِ آرزو آٹھوں پہر ہے سوئے در آقاﷺ
خدارا کیجئے نخلِ تمنّا بارور آقاﷺ
فلک بے مہر‘ طالع نارسا، دل وقفِ حیرانی
مدد اے آمنہ﷞ کے لال اے محبوبِ سبحانیﷺ
سلام اے روشنی ہر کور کی، قوت ضعیفوں کی
سلام اے قسمتیں چمکانے والے تِیرہ بختوں کی
سلام اے بھرنے والے جھولیاں اپنے فقیروں کی
سلام اے قبلۂ حاجات، اے دولت غریبوں کی
فلک بے مہر‘ طالع نارسا، دل وقفِ حیرانی
مدد اے آمنہ کے لال اے محبوبِ سبحانیﷺ
سلام اے مالک و مختارِ جنت رات دن تم پر
سلام اے صاحبِ تاجِ شفاعت رات دن تم پر
سلام اے سرورِ ملک نبوت رات دن تم پر
سلام اے نوشۂ بزمِ رسالت رات دن تم پر
فلک بے مہر‘ طالع نارسا، دل وقفِ حیرانی
مدد اے آمنہ کے لال اے محبوبِ سبحانیﷺ
درودیں آپ پر اَے لامکاں عرشِ عُلٰی والے
درودیں آپ پر قَوسَین والے اور دنیٰ والے
درودیں آپ پر والشمس والے والضحٰی والے
درودیں آپ پر مَازَاغ والے ماطغٰی والے
فلک بے مہر‘ طالع نارسا، دل وقفِ حیرانی
مدد اے آمنہ کے لال اے محبوبِ سبحانیﷺ

Was this article helpful?
YesNo