Skip to main content
نعت

باغ میں نرگس ہے خنداں ازنگاہ مصطفی

By August 28, 2021No Comments

ازنگاہ مصطفیﷺ

باغ میں نرگس ہے خنداں ازنگاہ مصطفیﷺ
خوش ہے آہو دریبا باں ازنگاہ مصطفیﷺ
میں نہیں نالاں و گریاں ازنگاہ مصطفیﷺ
بڑھ رہی ہیں میری خوشیاں ازنگاہ مصطفیﷺ
عاصیو آؤ چلو بخشش کی چادر اوڑھنے
میں چلا طیبہ خراماں ازنگاہ مصطفیﷺ
معصیت مٹنے لگی میرے نامے سے کہ ہے
مغفرت رحمت بداماں از نگاہ مصطفیﷺ
کچھ درودوں  کی ہیں مالا کچھ سلاموں کے ہیں ہار
کل بروز حشر ساماں از نگاہ مصطفیﷺ
روز محشر غمزدوں کو کیا سہارا مل گیا
مسکراہٹ ہے بہ دنداں از نگاہ مصطفیﷺ
شافع روز جزا تشریف لائے دیکھئے
اب سب ہی کے لب ہیں خنداں ازنگاہ مصطفیﷺ
یارسول اللہﷺ کے نعرے لگاتے ہی رہو
پھر نہیں ہوگے پریشاں ازنگاہ مصطفیﷺ
’’قادریم نعرہ شہ برکت اللہ می زنم‘‘
ہیں کرم مجھ پر نمایاں از نگاہ مصطفیﷺ
نعت خوانی سے ملا تمغہ شفاعت کا مجھے
ہوگیا کامل مسلماں از نگاہ مصطفیﷺ
تو نے حافؔظ پالیا رستہ دخول خلد کا
گاہ اُفتاں گاہ خیزاں از نگاہ مصطفیﷺ
(۲۹ صفر المظفر ۱۴۳۹؁ھ/ ۱۹ نومبر ۲۰۱۷؁ء)

(درج بالا اشعار، علامہ عبد الرحمان جامی کی فارسی نعت ’’ازنگاہ مست تو‘‘ سے متاثر ہو کر اُسی زمین میں کہے)۔