Skip to main content

اے نبی کے جانشینِ اوّلیں تم پر سلام
ناز بردارِ مزاجِ شاہِ دیں تم پر سلام

ثانئِ اثنین اے محبوبِ داور کے رفیق
جانثارِ رحمتُ لِّلعالمیں تم پر سلام

وقت کےکذّاب کوکیسےکُچل کےرکھدیا
حافظِ ناموسِ ختمُ المُرسلیں تم پرسلام

اے امامُ الاصفیا سرمایۂِ مہر و وفا
کجکلاہِ کِشور صِدق ویقیں تم پر سلام

اے اسیرِ حلقۂِ زلفِ مُعنبّر مرحبا
اے شہیدِ ہر دوچشمِ نرگسیں تم پر سلام

بلبلِ گلزار معنٰی گُلبنِ طُوبائے نور
اے بہارِ گلشنِ اہلِ یقین تم پر سلام

سرمۂِ چشمِ غزالاں تیری تربت کا غُبار
اے مکینِ قصرِ فردوسِ بریں تم پر سلام

باعثِ تسکینِ قلبِ خَستگاں نظرِ کرم !
غمگسار و مونسِ جانِِ حزیں تم پر سلام

نسبتِ صدیق اکبر سے ہوں ثاقب سرفراز
گر چہ اس اعزاز کے قابل نہیں تم پرسلام

کلام : پیر ثاقب رضا مصطفائی